بیماریاں

کیا آپ طویل عرصے سے بیماری کا شکار ہیں؟ کیا آپ باقاعدگی سے ادویات لیتے ہیں؟ کیا آپ نے اپنے آبائی ملک میں یا وہاں سے رخصت ہوتے وقت طبی علاج کروایا تھا؟

Icon_Medic_Help.png

میڈک ہیلپ پر جائیں اور اپنے مسائل بیان کریں۔

بعض بیماریاں متعدی ہوتی ہیں۔ اس سے مراد ہے کہ بیماری ایک فرد سے دوسرے فرد میں منتقل ہو سکتی ہے۔ یہ ہوا، گندے ہاتھوں، خون یا جسمانی تعلق کے علاوہ قے، فضلے یا براہِ راست رابطے سے بھی ہو سکتی ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ میں یہ علامات موجود ہوں تو میڈک ہیلپ سے رابطہ کریں۔ یہ آپ کو اور آپ کے گرد لوگوں کو محفوظ رکھنے میں مدد کرتا یے۔

بیماریاں جیسا کہ سوزاک، ہرپس، آتشک یا کلیمائیڈیا جنسی تعلقات کے دوران منتقل ہو سکتی ہیں۔ اثرات میں اخراج، خارش اور سوجن، السر یا تناسلی مقام میں درد شامل ہو سکتا ہے۔ تاہم، آپ بغیر کوئی علامت ظاہر ہوئے بھی متاثر ہو سکتے ہیں۔

Icon_Kondome.png

جنسی طور پر منتقل ہونے والی بیماریوں سے اپنا تحفظ کریں۔ جنسی عمل کے دوران ہمیشہ کنڈوم استعمال کریں۔ آپ انہیں مرکز سے حاصل کر سکتے ہیں یا کیمسٹ، فارمیسی یا زیادہ تر سپر مارکیٹس سے خرید سکتے ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ کسی جنسی طور پر منتقل ہونے والی بیماری کی علامت رکھتے ہوں تو میڈک ہیلپ پر جائیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ غیر یقینی ہوں کہ آیا آپ کو جنسی فعل کے بعد کنڈوم کے بغیر جنسی طور پر منتقل ہونے والی بیماری ہو سکتی ہے، تو مشاورت کے لیے میڈک ہیلپ پر جائیں۔ علامات ظاہر ہونے تک انتظار مت کریں۔

HIV ایک وائرس ہے جو مدافعتی نظام کو کمزور کرتا ہے۔ آپ بغیر کسی علامت کے وائرس کا شکار ہو سکتے ہیں۔ اگر آپ ادویات پر نہیں ہیں تو یہ آپ کے جسم کو اس حد تک بیمار کر سکتا ہے کہ آپ بیمار ہو جائیں۔ اسے ایڈز کہا جاتا ہے۔

یہ بیماری خون، کنڈوم کے بغیر جنسی فعل، استعمال شدہ آلودہ سرنج کے استعمال، یا ماں سے براہِ راست اس کے نازائدہ بچے کو ہو سکتا ہے۔ اگر آپ اس وائرس کا شکار ہیں تو آپ کسی ظاہری علامت کی نشانی کے بغیر دوسرے لوگوں کو متاثر کر سکتے ہیں۔

HIV / ایڈز قابلِ علاج نہیں ہے۔ تاہم، ادویات وائرس کو کنٹرول کرنے اور اثرات کو کم کرنے میں مدد دیتی ہیں۔

Icon_Kondome.png

خود کو HIV / ایڈز سے بچائیں۔ جنسی عمل کے دوران ہمیشہ کنڈوم استعمال کریں۔ آپ انہیں مرکز سے حاصل کر سکتے ہیں یا کیمسٹ، فارمیسی یا زیادہ تر سپر مارکیٹس سے خرید سکتے ہیں۔

Icon_Spritze.png

متاثر ہونے سے بچنے کے لیے درون وریدی ادویات کے استعمال کے لیے ہمیشہ صاف اور غیر استعمال شدہ سرنجیں استعمال کریں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ غیر یقینی ہوں کہ آیا آپ کنڈوم کے بغیر جنسی فعل کے بعد HIV / ایڈز یا دیگر جنسی طور پر منتقل ہونے والی بیماری کا شکار ہو سکتے ہیں تو مشاورت کے لیے میڈک ہیلپ پر جائیں۔ علامات ظاہر ہونے تک انتظار مت کریں۔

تپ دق کا شکار لوگ کم از کم تین ہفتوں تک کھانسی، بخار، رات کو پسینہ آنے یا وزن کم ہونے کا شکار رہتے ہیں۔ تپ دق تب منتقل ہو سکتی ہے جب بیماری کا شکار لوگوں کے کھانسے جانے والی ہوا میں صحت مند لوگ سانس لیتے ہیں۔

تپ دق خطرناک ہے۔ تاہم، اگر یہ بیماری ابتدائی مرحلے پر شناخت ہو جائے تو اس کا علاج کیا جا سکتا ہے۔ علاج میں کم از کم چھ ہفتے لگتے ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ کو تپ دق کی کوئی علامات ہوں، تپ دق کا ایک بار علاج کروا چکے ہوں یا ایسے شخص سے رابطے میں رہ چکے ہوں جسے یہ بیماری تھی تو میڈک ہیلپ پر جائیں۔

الکوحل، منشیات اور دیگر مادے آپ کو عادی بنا سکتے ہیں اور آپ کی صحت کو نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ منشیات کا استعمال منسوخ کریں۔

درون وریدی ادویات کے استعمال کی صورت میں بیماریاں بذریعہ خون منتقل ہو سکتی ہیں، مثال کےطور پر، جب استعمال شدہ سرنجیں استعمال کی جائیں۔

Icon_Spritze.png

اگر آپ منشیات سے انکار نہیں کر سکتے تو متاثر ہونے سے بچنے کے لیے ہمیشہ صاف اور غیر استعمال شدہ سرنجیں استعمال کریں۔

Icon_Medic_Help.png

نشے کا علاج اور اس میں کمی کی جا سکتی ہے۔ میڈک ہیلپ سے رابطہ کریں۔

مشکل تجربات یا تشدد - جیسا کہ جنگ، فرار، تشدد اور جنسی زیادتی - جسم یا دماغ کو بیمار کر سکتا ہے۔ الکوحل کا بکثرت استعمال یا دیگر نشے بھی اپنا کردار ادا کر سکتے ہیں۔

متعدد متاثرہ افراد ذہنی بیماری کے بارے میں بات کرنا مشکل سمجھتے ہیں۔ انہیں سنجیدگی سے لینا اور علاج کروانا اہم ہے جیسا کہ آپ دیگر بیماریوں میں کرتے ہیں۔

ذہنی بیماریوں کی ممکنہ علامات میں طویل عرصے تک نہ سو پانا، ڈراؤنے خواب، ناقابل فہم درد یا دیگر مسائل شامل ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

ذہنی پریشانی کا علاج کیا جا سکتا ہے۔ میڈک ہیلپ سے رابطہ کریں۔

لاکڑا کاکڑا انتہائی متعدی بیماری ہے۔ عمومی علامات میں بخار اور ابتدائی طور پر صاف چھالوں کے ساتھ جلد کی سوزش ہیں۔ آپ ویکسین لگوا کے خود کو لاکڑا کاکڑا سے بچا سکتے ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ یا آپ کے بچے کو لاکڑا کاکڑا کی کوئی علامات ہوں تو میڈک ہیلپ پر جائیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ کو ابھی لاکڑا کاکڑا نہیں ہوا تو اس کی ویکسین لگوائیں۔ میڈک ہیلپ پر جائیں۔

خسرہ کا شکار لوگ اکثر بخار، سرخ آنکھوں، کھانسی اور سرخ دھبوں کے ساتھ جلد کی سوزش کا شکار ہوتے ہیں۔ آپ ویکسین لگوا کے خود کو خسرے سے بچا سکتے ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ یا آپ کے بچے کو خسرے کی کوئی علامات ہوں تو میڈک ہیلپ پر جائیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ کو ابھی خسرہ نہیں ہوا تو اس کی ویکسین لگوائیں۔ میڈک ہیلپ پر جائیں۔

خناق تنفس کی بالائی نالیوں یا جلد کی بیماری ہے۔ اس کی دو اقسام ہیں: گلے کا خناق اور جلد کا خناق۔

گلے کے خناق کا شکار لوگ اکثر گلے کے درد، بخار اور نگلتے وقت درد کا شکار رہتے ہیں۔ جلد کے خناق کی اہم ترین علامت میں وہ زخم ہیں جو خراب ہو جاتے ہیں۔ آپ ویکسین لگوا کے خود کو خناق سے بچا سکتے ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ یا آپ کے بچے کو خناق کی کوئی علامات ہوں تو میڈک ہیلپ پر جائیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ کو ابھی خناق نہیں ہوا تو اس کی ویکسین لگوائیں۔ میڈک ہیلپ پر جائیں۔

کھجلی وسیع طور پر پھیلنے والی جلدی بیماری ہے۔ یہ ان طفیلیوں سے لاحق ہوتی ہے جو اپنا راستہ جلد میں بناتے ہیں۔

جسمانی ردعمل میں زیادہ تر تناسلی مقام، انگلیوں کے درمیان، کلائیوں اور دیگر جوڑوں، بغلوں اور نپلز پر طاقتور خارش، آبلے اور جلد کی سوزش شامل ہیں۔

یہ بیماری دو لوگوں کے درمیان براہِ راست رابطے سے منتقل ہوتی ہے۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ یا آپ کے بچے کو کھجلی کی کوئی علامات ہوں تو میڈک ہیلپ پر جائیں۔

معدے اور آنتوں کی سوجن کی صورت میں، متلی، قے اور اسہال کے ساتھ بخار اور معدے کے درد کا سامنا ہوتا ہے۔ وہ لوگ جو یہ بیماری رکھتے ہیں وہ مختصر وقت میں زیادہ تر مائع خارج کر دیتے ہیں۔

Icon_Medic_Help.png

اگر آپ کو پیٹ کے امراض کی کوئی علامات ہوں تو میڈک ہیلپ پر جائیں۔

Icon_Trinken.png

بکثرت پانی یا محدود مقدار میں چائے پیئیں۔

Icon_Haende_waschen.png

دوسروں کو متاثر کرنے سے بچانے کے لیے اپنے ہاتھ باقاعدگی سے صابن سے دھوئیں۔

دیگر کئی بیماریاں موجود ہیں۔ یہاں آپ بنیادی طور پر اہم ترین متعدی بیماریوں سے متعلق معلومات حاصل کریں گے۔

Icon_Medic_Help.png

خواہ آپ کی علامات یہاں بیان کردہ بیماروں کے مطابق نہ بھی ہوں، تب بھی آپ میڈک ہیلپ پر جائیں۔

Datenschutzerklärung